جوڑوں کے درد کے لئے 7 ایسی چیزیں جو آپ کی صحت کے لئے فائدہ مند ہیں

Reading Time: 4 minutes

جوڑوں کےدردکامسئلہ عمر کےساتھ ہونے لگتا ہے۔اکثربڑےبزرگوں میں جوڑدرد کی بیماری ہوتی ہے۔بعض اوقات جوڑوں میں درد کی وجہ کوئی چوٹ یاکمزوری بھی ہوسکتی ہے۔جوڑوں میں درد کی وجہ سوزش بھی ہوتی ہے جس وجہ سے انسان تکلیف میں مبتلا ہوتا ہے۔ہم کچھ ایسی غذاؤں کا استعمال کرکے گٹھیا کی درد کو کم کرسکتے ہی

وٹامنز اور غذائیت سے بھرپور غذا کا استعمال ہمیں تکلیف سے آزاد کرسکتا ہے۔بہت سی غذائیں بھی دردکاباعث بن سکتی ہیں۔اس لئے ایسی غذاؤں کااستعمال کرناچاہئے جن  سے ہم اپنی صحت کا خیال کرسکیں اورجوڑوں کےدردسے نجات حاصل کرسکیں۔

متوازن غذا اوسٹیوارتھرائٹس سے بچاسکتی ہے؟-

سوزش کے اثرات کم کرنا-

متوازن اور غذائیت سے بھرپور غذاجسم کو مزید نقصان سے بچاسکتی  ہے۔اور سوزش کے اثرات کو کم کرتی ہے۔ایسی غذااوسٹیوارتھرائٹس کےلئےبہت ضروری ہے۔وٹامن اے،سی اور ای اس کے علاہ اینٹی آکسیڈینٹ سے بھرپورغذا بھی سوزش کے اثرات کو کم کرتی ہے۔

کولیسٹرول کی سطح کوکم کرنا-

اوسٹیوارتھرائٹس کے مریضوں میں زیادہ تر بلڈپریشرکاامکان ہوتا ہے۔متوازن غذا اور غذائیت سے بھرپورغذاکولیسٹرول کی سطح کوٹھیک رکھتی ہے۔اس لئے ایسی غذاکااستعمال کرناچاہیےجو کولیسٹرول کی سطح کو کنٹرول میں رکھے۔بلڈپریشر بھی بہت سی بیماریوں کا باعث بنتا ہے۔اس لئے ہمیں ایسی غذاؤں کا استعمال کرناچاہیے جس سے بلڈپریشر کنٹرول رہے۔

صحت مندوزن کو برقرار رکھنا-

زیادہ وزن جوڑوں پر دباؤڈال سکتا ہے۔جسم میں چربی جوڑوں میں سوزش کا سبب بن سکتی ہے۔صحت مند وزن برقرار رکھنا کچھ لوگوں کے لئے مشکل ہوتا ہے۔کیونکہ کچھ افراد نقل وحرکت کم کرتے ہیں۔زیادہ وزن بہت سے مسائل کا باعث بنتا ہے۔اضافی وزن دلی کی بیماریوں کا بھی باعث بنتا ہے۔اس لئے صحت مند وزن کا ہونا بہت ضروری ہے۔

جوڑوں کے درد کو کم کرنے والی غذا-

ہمیں جوڑوں کے درد سےنجات حاصل کرنے کے لئےکس غذاکااستعمال کرناچاہیے وہ مندرجہ ذیل ہیں؛

مچھلی-

جوڑوں کے درد کے علاوہ مچھلی ویسے بھی ہماری صحت کے لئے بہت مفید ہے۔مچھلی میں ایسے غذائی اجزا موجود ہوتے ہیں جن کی مدد سے ہم اچھی صحت حاصل کرسکتے ہیں۔مچھلی میں اومیگا3فیٹی ایسڈ پایا جاتا ہے۔سردیوں کے موسم میں جوڑوں کے درد میں مبتلا افراد کو لازمی مچھلی کا اسستعمال کرنا چاہیے۔اس کے علاوہ جو افرامچھلی کھانا پسند نہیں کرتے ان کو چاہیے کہ مچھلی کے تیل سے بنے کیپسول کا استعمال کریں۔مچھلی میں اینٹی سوزش خصوصیات پائی جاتیں ہیں جو سوزش کے اثرات کو کم کرتی ہے۔

زیتون کا تیل-

219122391

اس کی مددسے کولیسٹرول کی سطح کم ہوتی ہے۔اس میں بھی اینٹی آکسیڈنٹ خصوصیات پائی جاتی ہیں۔جوڑوں کے درد میں مبتلا افراد کو اس کا استعمال کرنا چاہیے تاکہ ہم کولیسٹرول کی سطح کو اچھا کرکے جوڑوں کے درد سے نجات حاصل کرسکین۔

جوڑوں کے درد کے لئے دودھ-

جوڑوں

دودھ،دہی اور پینر میں کیلشیم اور وٹامن ڈی بھرپور ہوتا ہے۔یہ ہڈیوں کے لئے بہت ضروری ہیں۔دودھ ہماری ہڈیوں کو مظبوط بناتا ہے۔اس کے علاوہ آئرن کی کمی کی وجہ سے ہمارے جوڑوں میں تکلیف ہوتی ہے جس کی وجہ کیلشیم بھی ہڈیوں میں جذب نہیں ہوتا۔اس کے علاوہ ان میں پروٹین بھی موجود ہوتی ہئ جو پٹھوں کی صحت اور نشوونما کے لئے ضروری ہے۔جو لوگ زیادہ وزن رکھتے ہیں ان کو کم استعمال کرنا چاہیےتا کہ وہ صحت مند وزن کو برقرار رکھ سکیں اور درد سے نجات حاصل کر سکیں۔

سبز پتوں والی سبزیاں-

سبزیاں اور فروٹ وٹامنز اور غذائیت سے بھرپور ہوتے ہیں ان میں موجود وٹامنز ہمیں بہت سے بیماریوں سے بچاتے ہیں۔سبز پتوں والی سبزیوں میں ایسے غذائی اجزا موجود ہوتے ہیں جو تناؤسے بچاتے ہیں اور اس کے علاوہ یہ اینٹی آکسیڈنٹ سے بھرپور ہوتے ہیں۔یہ جسم کو انفیکشن سے لڑنے میں مدد فراہم کرتیں ہیں۔ان میں موجود وٹامن ڈی کیلشیم میں جذب ہوکر مدافعتی نظام کو مضبوط بناتا ہے۔سبز پتوں والی سبزیون میں پالک اور بند گوبھی شامل ہے۔

گرین ٹی-

جوڑوں

ماہرین کے خیال کے مطابق گرین ٹی سوجن کے اثرات کو کم کرتی ہے۔اس کے علاوہ یہ کارٹلیج کے نقصان کی شرح کو کم کرتا ہے۔اس میں پولی فینول کی اعلی مقدار ہوتی ہے جو اینٹی آکسیڈنٹ ہے۔جو انفیکشن سے لڑنے میں مدد کرتی ہے۔

لہسن-

لہسن ہرکھانے میں استعمال ہونے والی چیز ہے۔لہسن ہمیں ذیابیطس اور بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں مدد کرتا ہے۔اس کے علاوہ اس کے صحت کے متعلق اور بھی بہت سے مسائل حل ہوتے ہیں۔یہ معدے کے مسئلے کو بھی حل کرنے کے لئے مفید ہے۔اس کا نہار منہ استعمال بہت اچھا ہے۔جوڑوں کے درد میں اسکا بھی استعمال لازمی کرنا چاہیے۔

گری دار میوے-

گری دار میووں میں بہت سے غذائی اجزا موجود ہوتے ہیں جیسےزنک،سلفر،کیلشیم،میگنیشیم،وٹامن ای فائبر وغیرہ۔یہ ہمارے مدافعتی نظام کے لئے بھی بہت اچھے ہیں۔ہمیں صحت مند رہنے کے لئے لازمی ان چیزوں کا استعمال کرنا چاہیے۔

کمر کی درد بھی خواتین میں عام ہے اگرآپ اس بارے جاننا چاہتے ہیں تو یہاں کلک کریں۔

پرہیز-

جوڑوں کے درد میں مبتلا افراد کو بہت سی چیزوں سے پرہیز کرنا چاہیے۔جن سےان کے جوڑوں کے درد کو سکون مل سکے۔

زیادہ میٹھی چیزوں اور شوگر کا استعمال نہیں کرنا چاہیے-

الکحل یعنی سوفٹ ڈرنک سے بھی پرہیز کرناچاہیے۔-

ایسی چیزیں جو سوزش پیدا کریں جیسے آلو کے چپس وغیرہ ان سے دور رہنا چاہیے۔

ہم کچھ چیزوں کے استعمال اور کچھ چیزوں سے پرہیز کرکے اپنے جوڑوں کے درد سے نجات حاصل کرسکتے ہیں۔لیکن اس کے ساتھ ساتھ ہمیں ڈاکٹر سے بھی ملنے کی ضرورت ہے۔اس کے لئے ہم مرہم ڈاٹ پی کے کی ویب سائٹ سے ڈاکٹر کی اپائنمنٹ حاصل کرسکتے ہیں اس کے علاوہ ہم وڈیو کنسلٹیشن یا اس نمبر پر 03111222398 آن لائن کنسلٹیشن بھی لے سکتے ہیں۔

 

 

The following two tabs change content below.
Avatar
I developed writing as my hobby with the passing years. Now, I am working as a writer and a medical researcher, For me blogging is more of sharing my knowledge with the common audiences