(Skin Whitening Cream) رنگ گورا کرنے والی کریموں کے 5 نقصانات

Skin Care
Dangers of using Skin whitening Creams
Reading Time: 3 minutes

ہمارے ہاں گورا رنگ خوبصورتی کی علامت سمجھا جاتا ہے اور اس کے حصول کی کوششوں میں لوگ ایسی ایسی حرکتیں کر بیٹھتے ہیں جس سے نہ صرف ان کی جلد غیر صحت مند ہو جاتی ہے بلکہ بعض اوقات وہ اپنی جلد کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا بیٹھتے ہیں۔

انسانی جلد کے رنگ کا انحصار جلد میں پائے جانے والے مادے میلانن پر ہوتا ہے۔ یہ جلد میں موجود ان خلیوں میں ہوتا ہے جنہیں ملانو سائٹس کہا جاتا ہے۔انسانی جلد کے مختلف رنگ میلانن کی مقدار میں کمی یا اضافے کی وجہ سے ہوتے ہیں۔ جلد کے رنگ پر مختلف ماحول اور جغرافیائی عوامل اثر انداز ہوتے ہیں۔اگر آپ جلد کی کسی بیماری کا شکار ہیں یا آپ کی جلد کے خلیوں میں کوئی ایسی خرابی پیداہو گئی ہے جس سےآپ کی رنگت متاثر ہو رہی ہے تو اس کا علاج کرانا بہرحال ضروری ہے۔لیکن اپنی صاف اور صحت مند جلد کو صرف گورے رنگ کی خاطر مختلف کریموں اور کیمیکلز کا تختہ مشق بنانا خطرات سے کھیلنے کے مترادف ہے۔

رنگ گورا کرنے والی کریموں کے بہت سے نقصانات ہیں جو معمولی سے سنگین نوعیت کے ہو سکتے ہیں۔ان کے بارے میں مکمل معلومات لینے سے آپ اپنی جلد کے حوالے سے بہتر فیصلے کر سکتے ہیں۔

Read Also: 4 Ways to Avoid Acne, Eczema and Oily Skin

جلن اور چبھن

جلد پر جلن اور چبھن رنگ گورا کرنے والی کریموں کا سب سے عام نقصان ہے جو کہ عموماً ایسی مصنوعات کے استعمال کے فوراً بعد دیکھا جاتا ہے۔ یہ صورتحال تب بھی پیش آسکتی ہے جب ان مصنوعات کو لگا کر دھوپ میں نکلا جائے۔دراصل ان کریموں میں شامل کیمیائی اجزأ سے جلد کی حساسیت بڑھ جاتی ہے۔ اگر کسی کریم کے استعمال سے آپ جلد پر جلن اور چبھن محسوس کریں تو اسے اتار کر فوراً ٹھنڈے پانی سے منہ دھو لیں۔

الرجی

یہ بھی ممکن ہے کہ آپ ان کریموں میں شامل اجزأ سے الرجی کا شکار ہوں جس کا نتیجہ خارش، جلد کی سرخی، جلن اور جلد کے تعدیے کی صورت میں نکل سکتا ہے۔ کوئی بھی کریم استعمال کرنے سے پہلے اس کے اجزائے ترکیبی ضرور پڑھ لیں تا کہ آپ الرجی کا باعث بننے والے کیمیائی اجزأ سے بچ سکیں۔

خشکی

جلد پر لگائی جانے والی کریموں کا انتخاب ہمیشہ اپنی جلد کی مناسبت سے کریں۔ ایسی مصنوعات خریدنے سے پہلے اپنی جلد کا جائزہ لیں تا کہ آپ اپنی ضروریات کے مطابق بنی ہوئی مصنوعات کا انتخاب کر سکیں۔ ایسا نہ کرنے کی صورت میں جلد پر خشکی ہو سکتی ہے ۔

ایکنی

جلد پر استعمال کی جانے والی مصنوعات کے غلط انتخاب کا ایک اور نتیجہ ایکنی کی صورت میں سامنے آسکتا ہے۔ یہ اس صورت میں ہو سکتا ہے جب آپ اپنی جلد پر ضرورت سے زیادہ چکنی مصنوعات استعمال کرتے ہیں۔اس وجہ سے جلد کے مسام بند ہو جاتے ہیں اور ایکنی کی شکایت ہونے لگتی ہے جس سے جلد پر نشانات بھی
پڑ سکتے ہیں۔

Read Also: 7 Most Reviewed and Best Dermatologists in Lahore

سورج کی روشنی سے حساسیت

رنگ گورا کرنے والی مصنوعات کا مستقل اور تادیر استعمال آپ کو سورج کی روشنی سے حساس کر سکتا ہے جس سے آپ سن برن، چھالوں اور جھائیوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔

جلد کا سرطان

غیر معیاری رنگ گورا کرنے والی کریموں کا مستقل استعمال جلد کے سرطان کا باعث بن سکتا ہے۔ان کریموں کے وقتی استعمال سے چہرہ تروتازہ لگنے لگتا ہے لیکن یہ اتنی دیر کے لیے ہوتا ہے جب تک کریم لگی رہے۔ مہنگی کریمیں بھی مکمل طور پر محفوظ نہیں ہوتی۔ خاص طور پر مرکری اور ہائیڈروکینون والی مصنوعات کو احتیاط اور ماہر امراض جلد کی زیر نگرانی استعمال کرنا ضروری ہے۔

اس سلسلے میں یہ جاننا بہرحال ضروری ہے کہ ہر ایک انسان کی جلد مختلف ہوتی ہے اور جو چیز کسی ایک کے لیے فائدہ مند ہو وہ دوسرے کے لیے نامناسب ہو سکتی ہے۔

Find the best skin specialist doctors in your city:

Best Skin Specialist in Rawalpindi
Best Skin Specialist in Faisalabad
Best Skin Specialist in Multan
Best Skin Specialist in Peshawar
Best Skin Specialist in Sargodha
Best Skin Specialist in Abbottabad
Best Skin Specialist in Gujranwala

Share This:

The following two tabs change content below.
Sehrish
She is pharmacist by profession and has worked with several health care setups.She began her career as health and lifestyle writer.She is adept in writing and editing informative articles for both consumer and scientific audiences,as well as patient education materials.

Comments are closed.