کیا آپ جانتے ہیں آدھے سر کا درد کیوں ہوتا ہے؟ وجوہات جانیے

Healthy Lifestyle
آدھے سر کا درد کیا ہے؟
Reading Time: 4 minutes
آدھے سر کا درد آجکل سب سے عام مرض بنتا جا رہا ہے۔ یہ درد کسی بھی وقت حملہ کر کے پورے دن کے لئے آپ کے دماغ کو جکڑ لیتا ہے۔ کچھ لوگ اپنی دن بھڑ کی سرگرمیاں اس درد کی وجہ سے باخوبی انجام نہیں دے پاتے۔ کچھ لوگ وقتی آرام کے لئے دوائیوں ا استعمال بھی کرتے ہیں۔
اس درد کی شدت ہر انسان میں مختلف ہوتی ہے۔ کچھ لوگوں کو شدید مگر کم قوت کے لئے درد ہوتا ہے اور کچھ لوگوں کو یہ درد دن بھڑ کے لئے رہتا ہے۔ آدھے سر کا درد یعنی کے میگرین باقی دردوں کی نسبت ذیادہ شدید ہوتا ہے کیونکہ یہ انسان کو وقتی طور پر کسی بھی کام میں مصروف نہیں ہونے دیتا۔

اس درد کی بہت سی وجوہات ہیں تاہم کسی ایک وجہ کو دائمی ووقرار دینا مشکل ہے۔ اس درد کا صحیح علاج ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر ناممکن ہے۔ یہ ایسا درد ہے جو باقی جسمانی عضاء پر بھی اثر انداز ہوتا ہے۔ بروقت علاج اس مرض میں یقینی کمی لا سکتا ہے۔

ٓآدھے سر کا درد کیا ہے؟

سر کے درد دو طرح کے ہو سکتے ہیں ۔ پورے سر کا درد اور آدھے سر کا درد۔ پورے سر کے درد کی بے شمار وجہ ہو سکتی ہیں۔ اور یہ درد بر داشت کے قابل ہوتا ہے کیونکہ دیر تک نہیں رہتا جبکہ آدھے سر کا درد سر کے صرف ایک حصے میں ہوتا ہے اور حرکت کر کے سر کے دوسرے حصے میں بھی جا سکتا ہے۔

اس سر کے درد میں مریض کی آنکھوں سے پانی بھی بہتا ہے۔ آنکھوں کا سرخ ہونا اور سوچنے کی صلاحیت میں کمی میگرین کی علامت ہے۔

اس درد کی کشیدگی میں بہترین نیورولوجسٹ سے پاکستان بھر میں اپائنٹمنٹ کے لئے ابھی مرہم ویب سائٹ وزٹ کریں۔

کیا آپ جانتے ہیں آدھے سر کا درد کیوں ہوتا ہے؟

آدھے سر کے درد کی اہم وجوہات

اس درد کی کوئی مخصوص وجہ تو نہیں ہے لیکن بہت سے قدرتی اور ماحولیاتی عناصر آدھے سر کے درد کا سبب بنتے ہیں۔ جن میں سے چند ایک درج ذیل ہیں۔
ذہنی دوباؤ۔
ماحولیاتی آلودگی۔
ڈیپریشن۔
بازار کے کھانوں کا مسلسل استعمال۔
قوتِ مدافعت کی کمزوری۔
ذیادہ سونا۔ .
پنیر کا ذیادہ استعمال۔
مصنوعی مٹھاس کا استعمال۔
یہ درد چند گنٹھوں سے لے کے چند دنوں تک رہتا ہے۔

آدھے سر کے درد سے بچاؤ

اس درد کا طبی علاج بے حد ضروری ہے۔ ماہر ڈاکٹر سے ادویات کے ذریعے یہ آپ اس بیماری سے نجات حاصل کر سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ سر کے درد سے بچاؤ کے لیے صحت مند زندگی گزارنا بہت ضروری ہے۔ اس کے علاوہ درج ذیل تدابیر کو بھی اپنایا جائے۔
کھانے اور سونے میں خاص کر احتیاط کی جائے۔
ذیادہ سے ذیادہ پانی کا استعمال کیا جائے۔
چکنائی کا استعمال بے حد کم کیا جائے۔
روزانہ ورزش کی عادت ڈالی جائے۔
چکنائی والے دودھ کا استعمال ذیادہ نہ کیا جائے۔

آدھے سر کے درد کے خطرناک اثرات

آدھے سر کے درد کے خطرناک اثرات

اگر یہ درد شدت اختیار کر جائے تو مریض دیگر بیماریوں سے بھی دوچار ہو سکتا ہے جن میں سے چند ایک درج ذیل ہیں۔
نظر میں دھندلاپن۔
جسم میں درد۔
دماغ کی کمزوری ۔
مٹاپا۔
بولنے میں دوشواری ۔
فالج۔

آدھے سر کا درد یعنی میگرین نہایت عام اور قدرِ غور بیماری ہے کیونکہ یہ انسان کے روز مرہ کے کاموں میں مصیبت کا باعث بن سکتا ہے

Few Most Popular Neurologists In Pakistan

Share This:

The following two tabs change content below.
Avatar
I am a passionate content writer and media person. My work experience includes freelancing and advertising. I have also worked on bilingual content and campaigns.