روزے میں پیاس بڑھانے اور پیاس کو بجھانے والے سات 7 کھانے

Reading Time: 4 minutes

روزے اگر گرمی کے موسم کے ہوں تو اس میں سب سے زیادہ تر انسان کو پانی کی کمی شدت سے محسوس ہوتی ہے ۔ اوریہی روزہ لگنےکا بھی سبب ہوتی ہے ۔ اکثر لوگ پیاس کی اس شدت سے گھبرا کر روزہ رکھنے سے خوفزدہ ہو جاتے ہیں ۔

گرمی کے موسم میں جسم کو ٹھنڈا رکھنے کے لیۓ پسینہ آنا ایک قدرتی امر ہے اس میں جسم میں موجود پانی خارج ہوتا ہے ۔ اور پانی کی اس کمی کو پورا کرنے کے لیۓ پیاس محسوس ہوتی ہے جو کہ عام دنوں میں تو پانی پی کر بجھائی جا سکتی ہے مگر رمضان میں روزے کی حالت میں مشکل ہو جاتی ہے

 روزے میں پیاس سے بچانے والے کھانے

روزے
image Credit: Khaleej time

 ماہرین غذائیت اس بات کا مشورہ دیتے ہیں کہ سحر وافطار کے وقت ان غذاؤں کا استعمال کرنا چاہیے جن سے روزے کی حالت میں پیاس کم محسوس ہوتی ہے

جو کا دلیہ

روزے
Image Credit: SAMAA TV

سحری کے وقت جو کا دلیہ دودھ میں پکا کر کھانے سے دن بھر پیاس نہیں لگتی ہے اس کی وجہ یہ ہوتی ہے کہ جو کا دلیہ پکنے کے دوران اپنے اندر پانی کی بڑی مقدار جزب کر لیتا ہے اس وجہ سے اس کی تاثیر ٹھنڈی ہوتی ہے اس وجہ سے جو افراد اس کو سحری کے وقت کھاتے ہیں ان کے اندر پانی کی کمی نہیں ہوتی ہے اور یہ دلیہ زیادہ دیر تک پیاس کو محسوس نہیں ہونے دیتا ہے

اس دلیۓ کی افادیت کو مذید بڑھانےکے لیۓ اسے رات بھر پانی میں بھیگا رہنے دیں اس سے اس کے اندر مذید پانی جزب ہو جاۓ گا ۔ اس کے علاوہ اس کو پکانےمیں بھی آسانی ہو گی ۔ یہ نہ صرف جسم کو اندر سے ٹھنڈا رکھے گا بلکہ جسم کے اندر پانی کی کمی کو بھی ہونے سے روکے گا ۔

دودھ اور دہی

ماہرین غذائيت کی تحقیق کے مطاب‍ق شدید پیاس کو بجھانے میں سادہ پانی کے مقابلے میں دودھ یا دہی زیادہ مفید ثابت ہوتے ہیں ۔ ان میں موجود کیلشیم ، کاربوہائیڈریٹ اور الیکٹرولائٹس جسم میں پانی کی کمی کو ہونے سے روکتے ہیں ۔

یہی وجہ سے کہ اکثر افراد افطار کے وقت دودھ والے شربت سے افطار کرتے ہیں ۔ جس سے ایک جانب تو ان کی پیاس فوری طور پر بجھ جاتی ہے اور پانی کی کمی بھی دور ہوتی ہے ۔

اسی طرح سحری میں پراٹھے  اور مصالحے دار کھانے وغیرہ کھانے کے بجاۓ اگر لسی یا دہی کھا لی جاۓ تو اس سےبھی دن بھر پیاس کی شدت کم محسوس ہو گی

پھلوں کا ملک شیک

روزے
Image Credit: Pinterset

اکثر پھلوں کا استعمال جسم میں پانی کی کمی کو پورا کرنےکے لیۓ بہت مفید ہوتا ہے ۔ لیکن اگر ان پھلوں کا رس نکال لیا جاۓ یا پھر ان کو پانی کے ساتھ ملا کر ان کا جوس بنا لیا جاۓ تو اس کے اثرات بھی جسم پر بہت اچھے پڑتے ہیں سحر و افطار دونوں اوقات میں ان کا استعمال بہت مفید ثابت ہوتا ہے جو کہ غذائیت سے بھر پور ہوتےہیں

عام طور پر تربوز ، اسٹرابیری ، کیلے اور اورنج وغیرہ ایسے پھل ہیں جن کا رس اور جوس روزے کی حالت میں بہت مفید ثابت ہوتا ہے

تازہ سبزیاں

اگر رمضان میں ہم اپنی غذا پر غور کریں تو اکثر افراد زیادہ تر مرغن کھانے کھاتے ہیں اور تلی ہوئی اور مصالحہ دار اشیا کااستعمال کرتےہیں جو کہ پیاس کی شدت بڑھانے کا سبب بنتےہیں ۔

ان تمام اشیا کی جگہ پر اگر ہم اپنی غذا میں تازہ  سبزیوں کا استعمال کچی حالت میں کریں تو اس سے ایک جانب تو جسم میں پہلے سے موجود پانی دیر تک محفوظ رہے گا اس کے ساتھ ساتھ یہ زیادہ دیر تک پیاس لگنے سے بھی بچائیں گے ۔

یہی سبب ہے کہ رمضان میں سحر و افطار میں سلاد کا استعمال نہ صرف صحت کے لیۓ مفید ہوتا ہے بلکہ پیاس سے بھی بچاتا ہے

پیاس بڑھانے والے کھانے

روزے
Image Credit: Jehlum update

زیادہ مصالحہ والے کھانے

جن غذاؤں میں زیادہ مصالحہ جات ہوتے ہیں ایسی غذاؤں کے کھانے سے عام حالات میں بھی پیاس زیادہ لگتی ہے مگر روزے کی حالت میں تو اس کی شدت مین مذید اضافہ ہو جاتا ہے اس وجہ سے سحر و افطار کے اوقات میں کوشش کریں کہ ایسے کھانے نہ کھائيں جس میں زیادہ مرچیں یا گرم مصالحے موجود ہوں

رمضان میں کی جانے والی کچھ غلطیاں جو صحت کے بڑے مسائل کا سبب بن سکتی ہیں ان کے بارے میں جاننے کےلیۓ کلک کریں 

زيادہ میٹھے کھانے

ایسی غذائيں جن میں زیادہ کاربوہائيڈریٹ موجود ہوتے ہیں ۔ جیسے کہ سفیدآٹے کی روٹی ، بیکری کا سامان ڈبل روٹی اور چاول ان تمام اشیا میں کاروبوہائيدریٹ موجود ہوتا ہے اور ان کو کھانے کےبعد بار بار منہ سوکھتا ہے اور پیاس محسوس ہوتی ہے

ان کھانوں کے نعم البدل کے طور پر تازہ پھلوں کا استعمال بہت مفید ثابت ہوتا ہے کیوں کہ اس میں موجود کاربوہائيڈریٹ قدرتی ہوتی ہے اور فوری طور پر جسم کا حصہ بن جاتی ہے

زیادہ چکنائی والے کھانے

بہت زيادہ تلی ہوئی اشیا جن میں پکوڑے اور سموسے وغیرہ شامل ہیں جب معدے میں جاتی ہیں تو چکنائی کی زیادہ مقدار کے سبب ان کو ہضم ہونے میں تاخیر کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ جس کی وجہ سے ان کو ہضم کرنے کے لیۓ زیادہ پانی کی ضرورت پڑتی ہے

یہی معاملہ سحری کے وقت میں پراٹھا کھانے سے بھی ہوتا ہے اس وجہ سے اس صورتحال میں  ماہر غذائیت ایسے کھانوں سے پرہیز ہی بہتر ہوتا ہے

رمضان کے مہینے میں صحت کے حوالے سے کسی بھی قسم کے مسلے کی صورت میں گھر بیٹھے آن لائن ڈاکٹر سے اپائنٹمنٹ لینےکے لیۓ مرہم ڈاٹ پی کے کی ایپ ڈاون لوڈ کریں یا پھر 03111222398 پر رابطہ کریں

The following two tabs change content below.
Ambreen Sethi

Ambreen Sethi

Ambreen Sethi is a passionate writer with around four years of experience as a medical researcher. She is a mother of three and loves to read books in her spare time.