ڈپریشن کو بڑھانے والی 5 غذائيں جو خطرناک ثابت ہو سکتی ہیں

Reading Time: 4 minutes

ڈپریشن ایک ایسی ذہنی بیماری ہے جس کے سبب انسان کے موڈ میں تیزی سے تبدیلی آتی ہے ۔ اور اس کی زندگی میں موڈ کے سبب آنے والا اتار چڑھاؤ اتنا زیادہ ہوتا ہے جو کہ اس کے روزمرہ کے کاموں کو بھی متاثر کر سکتا ہے ۔ بے سبب اداسی ، غصہ اور بے چینی یہ تمام ایسی حالتیں ہیں جو کہ اس بیماری میں مبتلا شخص کی زندگی کو بری طرح متاثر کرتے ہیں

ڈپریشن پر اثر انداز ہونے والے عوامل

ڈپریشن اگرچہ ایک بیماری ہے جس طرح ہر بیماری میں علاج کے ساتھ ساتھ پرہیز بھی ضروری ہوتا ہے اسی طرح ڈپریشن چونکہ ایک ذہنی بیماری ہے اس وجہ سے اس میں پرہیز کا انداز تھوڑا مختلف ہوتا ہے

اس بیماری کی شدت میں ایک جانب تو انسان کا غلط طرز زندگی بہت اضافہ کر سکتی ہے ۔ اس وجہ سے اس بیماری کی شدت کو کم کرنے کے لیۓ زندگی میں ایک شیڈول اور ٹائم ٹیبل کا ہونا بہت اہم کردار ادا کرتا ہے ۔ اسی طرح موسم کی تبدیلی بھی اس بیماری پر اثر انداز ہو سکتی ہے

غذائیں جو ڈپریشن کی شدت کو بڑھا سکتی ہیں

جس طرح طرز زندگی کا ڈپریشن پر گہرا اثر ہوتا ہے اسی طرح کھانے پینے کی کچھ عادات بھی اس کی شدت میں اضافے کا باعث بن سکتی ہیں اس وجہ سے ایسی غذاؤں کو کھانے میں احتیاط کرنی چاہیۓ ان غذاؤں میں سے کچھ یہ ہیں

جوسز ، اور مصنوعی مٹھاس والے مشروبات

ڈپریشن
Image Credit: Beverage Daily

عام طور پر ڈپریشن کا مریض بہت کمزوری محسوس کر رہا ہوتا ہے ۔ اس صورت میں فوری توانائی کے ذریعے کے طور پر مشروبات کا استعمال دنیا بھر میں عام سمجھا جاتا ہے مگر ڈپریشن کے مریض کے لیۓ یہ ایک بہتر حل نہیں ہے کیوں کہ اس طرح سے ایک جانب تو جسم میں توانائي کی شرح میں فوری اضافہ تو ہو جاتا ہے مگر بھوک میں کمی واقع نہیں ہوتی ۔ اسی طرح انرجی ڈرنک بھی بہت خطرناک ثابت ہوتا ہے

اس وجہ سے ڈپریشن کے مریض میں بھوک کی شدت اور توانائی میں اضافہ چڑچڑا پن اور غصہ پیدا کر دیتا ہے ۔ جس کی وجہ سے اس مرض میں اضافہ دیکھنے میں آتا ہے

کیفین والے مشربات

کیفین والے مشروبات جن میں چاۓ کافی وغیرہ شامل ہیں عام طور پر اعصاب کو پر سکون کرنے کے لیۓ استعمال ہوتا ہے ۔ مگر اس کے ساتھ ساتھ یہ نیند کو کم کر دیتا ہے جب کہ ڈپریشن کے مریضوں کے لیۓ نیند بہت ضروری ہوتی ہے اور ان کی نیند کے خراب ہونے کا مطلب ان کی بیماری کی شدت میں اضافہ ہو جاتا ہے ۔

کیوں کہ اس سے مریض کی نیند کم ہوتی ہے اور اس کے اندر بے آرامی کے سبب غصہ جھنجھلاہٹ کا باعث بن جاتا ہے جو کہ خطرناک بھی ثابت ہو سکتا ہے

زیادہ مصالحے اور چکنائی والے کھانے

ڈپریشن
Image Credit:thecorrespondent

بہت زیادہ مصالحے اور چکنائی والے کھانے جن میں گوشت ، چکنائی اور مصالحے موجود ہوتے ہیں ایک جانب تو ایسے کھانے معدے پر بوجھ ڈالتے ہیں ۔ دوسری جانب زیادہ چکنائی خون میں کولیسٹرول میں اضافے کا سبب بنتی ہے جو کہ جسم کے بہت سارے حصوں کو متاثر کرنے کے ساتھ ساتھ ذہن کو بھی متاثر کرتے ہیں جس سے ڈپریشن بڑھ بھی سکتا ہے

بیکری والے کھانے

بیکری والی اشیا کی تیاری میں ایک جانب تو سفید فائن آٹا استعمال ہوتا ہے اس کے ساتھ ساتھ اس کی تیاری میں چکنائی اور ایسی مٹھاس کا استعمال ہوتا ہے جو کہ ڈپریشن والے مریضوں کے انرجی لیول کو ایک بڑھاوا دیتا ہے

دوسری جانب اس میں فائبر کی غیر موجودگی کے سبب نہ صرف نظام انہضام کو متاثر کرتا ہے جب کہ دوسری جانب اس سے مریض کے اندر ایک بے چینی پیدا ہوتی ہے جو کہ اس کے غصے اضطراب میں بھی اضافہ کر دیتا ہے

ڈبہ بند غذائيں

ڈپریشن
Image Credit:Dreamstime.com

ڈبہ بند غذاؤں کو محفوظ کرنے کےلیۓ ان کے اندر ایسے کیمیکل استعمال کیۓ جاتے ہیں جو کہ جب استعمال کی جاتی ہیں جو کہ جسم کے اندر ہارمون کے نظام میں بے ترتیبی پیدا کر دیتا ہے ۔ ہارمون کے نظام میں تبدیلی کے سبب ایسے ہارمون کا بھی اخراج بھی بڑھ جاتا ہے جو کہ غصہ اور بے چینی کا باعث بن جاتے ہیں اس وجہ سے ڈپریشن کی شدت میں اضافہ ہو سکتا ہے

عام طور پر ذہنی امراض میں مبتلا افراد کو  ماہر نفسیات ڈاکٹر کے پاس لے جا کر معائنہ کروانا ایک بہت مشکل امر ہوتا ہے ۔ اس وجہ سے ایسے مریضوں کو نفسیات کے ماہر ڈاکٹروں کے پاس لے جانے کے بجاۓ آن لائن معائنہ کروانا ایک آسان کام ہوتا ہے ۔ ماہر اور مستند ڈاکٹر سے رابطہ کرنے کے لیۓ مرہم ڈاٹ پی کے کی ایپ ڈاون لوڈ کریں یا پھر 03111222398 پر براہ راست رابطہ کریں

The following two tabs change content below.
Ambreen Sethi

Ambreen Sethi

Ambreen Sethi is a passionate writer with around four years of experience as a medical researcher. She is a mother of three and loves to read books in her spare time.