روزے کی حالت میں معدے کی جلن اور تیزابیت کی وجوہات اور اس کا علاج

Reading Time: 4 minutes

روزے کی حالت میں انسان کا معدہ دس سے بارہ گھنٹے تک خالی رہتا ہے ۔ مگر افطار کے بعد جب بندہ کچھ کھاتا ہے تو اس کے بعد .سینے میں شدید جلن ، پیٹ میں درد اور شدید گیس بننا شروع ہو جاتی ہے ۔

بعض افراد میں یہ علامات اتنی شدید ہوتی ہیں کہ اس کی وجہ سے دوران روزہ قے بھی آ سکتی ہے. جس کی وجہ سے روزے کےمتاثر ہونے کے امکانات بھی ہوتی ہیں ۔

روزے کی حالت میں معدے میں جلن کی وجوہات

روزے کی حالت

روزے کی حالت میں انسان کا معدہ کافی دیر تک خالی رہتا ہے ۔ اس دوران معدے کی دیواریں  مستقل طور پر تیزاب کو خارج کرتا رہتا ہے. جس کی وجہ سے معدے میں تیزابیت کی شرح میں اضافہ ہو جاتا ہے ۔جو کہ کچھ خاص وجوہات کی وجہ سے مذید بڑھ بھی سکتا ہے

زيادہ چکنائی والا کھانا

عام طور پر رمضان کے مہینے میں لوگ سحر و افطار کے وقت پکوانوں کی تیاری میں ایسی اشیا کا استعمال زیادہ کرتے ہیں. جو کہ چکنائی سے بھر پور ہوتی ہیں ۔ مثال کے طور پر پکوڑے ، سموسے ، پراٹھے وغیرہ ۔ اس سب چیزوں کا انتخاب کرتے ہوۓ لوگوں کے ذہن میں یہ خیال ہوتا ہے .کہ یہ چیزیں دیر سے ہضم ہوتی ہیں .اس وجہ سے ان کے استعمال کے سبب بھوک کم لگے گی

لیکن درحقیقت یہ غذائیں جو دیر تک معدے میں رہتی ہیں. معدے میں موجود تیزاب کے ساتھ مل کر معدے کی جلن ، تیزابیت اور گیس کا سبب بن جاتی ہیں

اس حوالے سے مذید معلومات کے لیۓ یہاں کلک کریں 

مرچوں والا کھانا

روزے کی حالت میں جیسے جیسے وقت گزرتا جاتا ہے. انسان ٹی وی پر کھانے کے اشتہارات اور تراکیب دیکھ دیکھ کر نت نۓ تجربات کرنےکے لیۓ تیار ہو جاتا ہے ۔ جس میں مصالحے دار اشیا کی تیاری بھی ہوتی ہے ۔ چھولوں کی چاٹ ، دہی بھلے اور ان میں مرچوں کی بھرمار منہ میں پانی لانے کا سبب تو بن سکتی ہے۔

 لیکن یہی جب معدے کا حصہ بنتے ہیں ۔ تو یہ معدے میں آگ لگا دینے کا باعث بن جاتے ہیں .اس کے علاوہ چھولے دیر سے ہضم ہونے والی بادی غذا ہونے کے سبب پیٹ کو گیس سے بھر دیتا ہے. جس سے پیٹ درد اور تیزابیت میں اضافہ ہو جاتا ہے

چاۓ یا کافی کا استعمال

چاۓ یا کافی میں کیقین موجود ہوتی ہے ۔ اس کے عادی افراد کو سگریٹ نوش کی طرح افطار کے فورا بعد چاۓ کافی کی ضرورت ہوتی ہے ۔ کیفین کے اندر یہ خصوصیت ہوتی ہے .کہ وہ معدے میں جا کر اس کے افعال کو سست کر دیتا ہے ۔ اس وجہ سے افطار کے فورا بعد یا سحری میں ان مشروبات کا استعمال ہاضمے کے عمل کو سست کر دیتا ہے .اور اس وجہ سےمعدےکی جلن کی شکایت روزے کی حالت میں ہو سکتی ہے

سوڈا والے مشروبات کا استعمال

عام طور پر ٹی وی کے اشتہارات کو دیکھ کر ہر فرد کو یہ محسوس ہوتا ہے .کہ بدہضمی اور معدے کے بوجھل پن کا بہترین ترین علاج یہی سوڈے والے مشروبات ہیں ۔ یہ ایک خام خیال ہے ان کے استعمال سے وقتی طور پر ڈکار تو آجاتا ہے

مگر اس کے بعد اس میں موجود سوڈا معدےکے تیزاب سےمل کر تیزابیت میں اضافہ کرتا ہے .اور دیگر مضر اثرات کا سبب بنتا ہے

روزے کی حالت میں معدے کی جلن کا علاج

روزے کی حالت

روزے کی حالت ہونے والی معدے کی جلن اور کھٹے ڈکاروں اور تیزابیت سے بچنے کا تمام تر دارومدار ہماری غذائی عادات پر ہوتا ہے ۔ کچھ باتوں پر عمل کر کے ہم اس تکلیف سے نہ صرف بچ سکتے ہیں .بلکہ بہت سکون کے ساتھ روزے رکھ سکتےہیں

سحر اور افطار میں بہت زيادہ چکنی اور مصالحے والی  اشیا کے کھانے سے پرہیز کریں

ایک وقت میں بہت پیٹ بھر کر کھانا نہ کھائيں

کھانا کھانے کےبعد کچھ وقت لازمی طور پر واک کریں یعنی اس کے ہضم کرنےکا اہتمام کریں فورا کھانے کےبعد لیٹ جانا تیزابیت میں اضافے کا باعث بن جاتا ہے

تمباکو نوشی سے پرہیز کریں ۔ اس سے بھی معدے میں گیس بننے کا عمل تیز ہوتا ہے اور تیزابیت میں اضافہ ہوتا ہے ۔

اکثر درد کش ادویات کے اندر ایسے اجزا موجود ہوتے ہیں جو کہ معدے میں تیزابیت کو بڑھا دیتے ہیں اس وجہ سے ان کے استعمال میں احتیاط کریں اور اگران کو لینا لازم ہو تو اس کو دودھ کے ساتھ لیں تاکہ تیزابی اثرات کو کم کیا جا سکتے

اگر روزے کی حالت میں معدے کی تیزابیت اور گیس کی شکایت میں افاقہ نہ ہو رہا ہو تو اس صورت میں معدے کے ماہر ڈاکٹر سے رجوع کریں ۔ کیوں کہ یہ علامات معدے اور جگر کی خرابی کو ظاہر کرتے ہیں

اس کے علاوہ روزے کی حالت میں آسانی سے آن لائن ڈاکٹر سے رابطہ کرنے کے لیۓ مرہم ڈاٹ پی کے کی ایپ ڈوان لوڈ کریں یا پھر 03111222398 پر کال کر کے براہ راست مشورہ حاصل کریں

The following two tabs change content below.
Ambreen Sethi

Ambreen Sethi

Ambreen Sethi is a passionate writer with around four years of experience as a medical researcher. She is a mother of three and loves to read books in her spare time.