ساون میں صحت مند رہنے کے لیے ۷ اہم تدابیر

Healthy Lifestyle
monsoon
Reading Time: 1 minute

ساون خوشی، تفریح اور ہریالی کا موسم ہے۔ بچے بڑے سب ہی اس خوبصورت موسم سے بھرپور لطف اٹھاتے دکھائی دیتے ہیں۔ تاہم یہی موسم صحت کے

لاتعداد مسائل بھی ساتھ لاتا ہے اور بے احتیاطی کی صورت میں لاتعداد بیماریاں پھیلنے کا سبب بھی بنتا ہے۔ ان تمام صحت کے مسائل سے بچنے کیلیئے ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کرنا ناگزیر ہے۔ خاص طوع پر بچوں، بزرگوں اور پہلے سے بیمار افراد کو اس موسم میں خاص نگہداشت کی ضرورت ہوتی ہے۔ کسی بھی بیماری کی صورت میں ماہر ڈاکٹروں سے مشورہ اور معائنہ کیلیئے مرہم ویب سائٹ کا استعمال کیجیئے۔

ساون میں پھیلنے والی عام بیماریاں

اس موسم میں درجہ حرارت کی اچانک تبدیلی بیماریوں کا باعث بنتی ہے۔ ساون میں مندرجہ ذیل بیماریوں سے بچائو کا اہتمام کرنا ضروری ہے۔

ڈینگی

ذکام

فوڈ پوائزنگ

آلودہ پانی سے پھیلنے والی بیماریاں

گردن توڑ بخار

جگر کا عارضہ کراچی اور لاہور میں جگر کی بیماری کے ماہر ڈاکٹر سے رابطہ اور معائنہ کیلیئے مرہم ویب سائٹ کا استعمال کجیئے۔

سانس کی بیماریاں

monsoon

monsoon

ساون میں بیماریوں سے محفوظ رہنے کیلیے اہم تدابیر

ساون کی رنگینی کا لطف اٹھانے کیلیئے اپنی صحت کی حفاظت کا خاص خیال رکھئیے۔ اس ضمن میں کچھ اہم اقدامات یہ ہیں۔

بارش کے موسم میں سب سے کارآمد چیز ایک رین کوٹ یا برساتی ہے۔ اگر آپ بس سٹاپ تک پیدل جاتے ہیں یا کسی بھی سلسلے میں گھر سے باہر نکلتے ہیں تو برساتی اپنے ساتھ رکنا مت بھولئیے۔ یہ آپ کو بارش میں بھیگ کر بیمار ہونے سے بھی بچائے گی اور آپ کے موبائل کی حفاظت میں بھی کار آمد ثابت ہو گی۔

وٹامن سی کو اپنی خوراک میں شامل کرنے سے آپ نزلہ زکام کی شدت میں کمی بھی لا سکتے ہیں اور اس وٹامن کی مدد سے آپ کو جلد صحت یاب ہونے میں مدد بھی ملے گی۔

بارش میں بھیگنے کے بعد صاف پانی سے دوبارہ نہانا اگرچہ آپ کو مشکل لگے گا لیکن ایسا کرنے سے آپ بہت سی بیماریوں

monsoon

monsoon

اور انفیکشن سے بچ سکتے ہیں۔

اس موسم میں نہانے کے بعد گرم مشروبات کا استعمال فرحت بخش ہونے کے ساتھ ساتھ صحت کے لئیے بھی مفید ہے۔ گرم دودھ یا سوپ پینے سے جسم کے درجہ حرارت میں اچانک تبدیلی کے باعث پیدا ہونے والی بیماریوں سے بچا جا سکتا ہے۔

اس موسم میں صفائی کا خاص خیال رکھنا چاہیئے۔ نمی کے باعث جراثیم کی افزائش بڑھ جاتی ہے اور بیماریاں پھیلنے کا امکان بھی۔ اگر آپ کو فلو کی شکایت ہو تو چھوٹے بچوں کے قریب جانے اور دوسروں سے ہاتھ ملانے سے گریز کیجیے۔

مانی کی مناسب مقدار کا استعمال یقینی بنائیے۔ اگرچہ درجہ حرارت میں کمی کے باعث پیاس میں کمی واقع ہو سکتی ہے لیکن پانی کی مناسب مقدار پیتے رہنے سے آپ کے جسم سے فاسد مادوں کا اخراج جاری رہتا ہے اور آپ بیماریوں سے محفوظ رہتے ہیں۔

اس موسم میں غذائیت سے بھرپور غذا استعمال کیجئیے۔ بازاری کھانا کھانے سے پرہیز کریں اور کھانے پکانے میں حفظان صحت کے اصولوں کو مد نظر رکھیں۔

ان احتیاطی تدابیر کو اختیار کرنے سےنہ صرف آپ برسات میں بیمار ہونے سے بچ سکتے ہیں بلکہ اپنے گھر والوں کی صحت کا خیال بھی رکھ سکتے ہیں۔

The following two tabs change content below.
Sehrish
She is pharmacist by profession and has worked with several health care setups.She began her career as health and lifestyle writer.She is adept in writing and editing informative articles for both consumer and scientific audiences,as well as patient education materials.