باپ بننے کے عمل کے دوران مردوں کے جسم میں ہونے والی 6 حیرت انگیز تبدیلیاں

Reading Time: 4 minutes

باپ بننے کے عمل کے حوالے سے عام طور پر لوگوں کا یہ خیال ہوتا ہے کہ مرد کے اندر باپ بننے کے عمل کے دوران جسمانی طور پر کسی بھی قسم کی تبدیلی واقع نہیں ہوتی ہے مگر اب جدید تحقیقات نے ان تمام باتوں کی نفی کر دی ہے

جدید تحقیقات کے مطابق جس طرح حالت حمل میں خواتین کے جسم میں بہت ساری تبدیلیاں واقع ہوتی ہیں اسی طرح مردوں کے جسم میں بھی کئی طرح کی تبدیلیاں واقع ہوتی ہیں جو ان کو باپ بننے کے عمل کے لیۓ ذہنی اور جسمانی طور پر تیار کرتی ہیں

باپ بننے کے دوران مردوں میں ہونے والی تبدیلیاں

باپ
Image Credit: Steemit

باپ بننے کے عمل کے دوران مردوں کی زںدگی میں بھی مختلف قسم کی جزباتی تبدیلیاں دیکھنے میں آتی ہیں ۔ جس کے سبب مختلف طرح کے ہارمون میں اتار چڑھاؤ ہوتا ہے اور بعض اوقات مرد بھی وہ تمام علامات محسوس کرتے ہیں جو کہ حاملہ عورت کر رہی ہوتی ہے جس میں متلی آنا ، چکر آنا وغیرہ تک شامل ہیں

ٹیسٹرون کے لیول کا گر جانا

مردوں کے اندر ٹیسٹرون کے لیول کے بڑھے ہونے کے سبب ان کے اندر غصہ ، جزبات عروج پر ہوتے ہیں ۔ اور اسی وجہ سے وہ مخالف جنس کی توجہ اور ساتھ کے متلاشی ہوتے ہیں ۔ لیکن جب مرد باپ بننے کے عمل سے گزر رہا ہوتا ہے تو اس کے جسم میں ٹیسٹرون لیول گر جاتا ہے جس کے سبب وہ دوسروں کی توجہ حاصل کرنے کے بجاۓ جزباتی طور پر اپنے خاندان سے جڑ جاتا ہے

تحقیقات کے مطابق وہ مرد جو باپ بننے کے عمل سے گزر رہے ہوتے ہیں ان کا ٹیسٹرون لیول ان مردوں سے کم ہوتا ہے جو کہ باپ بننے کی ذمہ داریوں سے آزاد ہوتے ہیں

آکسی ٹوسن اور ڈوپامائن کا لیول بڑھ جاتا ہے

یہ وہ دو کیمیکل ہوتے ہیں جو کہ والدین کو ان کے بچوں کے ساتھ جزباتی طور پر جوڑنے کا سبب بنتے ہیں ۔ جب جسم میں ٹیسٹرون کے لیول میں کمی واقع ہوتی ہے تو اس سے ان کیمیکل کے لیول میں اضافہ ہو جاتا ہے جس سے مردوں کے اندر ان کے پیدا ہونے والے بچے سے محبت کے جزبات پیدا ہوتے ہیں ۔اور مرد بچے کی پیدائش سے قبل ہی اس سے جزباتی طور پر جڑنا شروع ہو جاتا ہے

عورتوں کی طرح مردوں میں بھی ڈپریشن

باپ
Image Credit:The Dad Train

عورتوں میں حمل کے دوران اور اس کے بعد والے وقت میں پوسٹ پارٹم ڈپریشن کے بارے میں تو سب ہی نے سنا ہو گا مگر مردوں میں بھی ہارمون کے اتار چڑھاؤ کے سبب ڈپریشن ہو سکتا ہے

ماہرین کے مطابق مردوں میں ٹیسٹرون کے لیول کی کمی کے سبب ان کو جزباتی طور پر بہت ڈاون محسوس ہوتا ہے اور مستقل طور پر یہ اثرات اس کو ڈپریشن کی طرف بھی لے جا سکتے ہیں ۔ باپ بننے کے جزباتی اتار چڑھاؤ ، ذمہ داریوں میں اضافے کا احساس اور جیون ساتھی کے رویۓ میں ہونے والی تبدیلی مردوں کو چڑچڑے پن اور ذہنی دباؤ کا شکار کر سکتی ہے

مرد باپ بننے کے بعد موٹے کیوں ہو جاتے ہیں جاننے کے لیۓ یہاں کلک کریں 

ذہنی تبدیلیاں بھی واقع ہوتی ہیں

سائندانوں کی تحقیق کے مطابق جب نۓ باپ بننے والے مردوں کے حوالے سے ایک ایکٹیوٹی کی گئی تو اس میں یہ مشاہدہ کیا گیا کہ والدین بننے  کے ابتدائی چار ماہ کے دوران عورتوں کی طرح مردوں کے دماغ میں بھی ایک خاص تبدیلی واقع ہوتی ہے ۔

اس دوران مرد وں میں بھی اپنے پیدا ہونے والے بچے کے لیۓ خاص محبت محسوس کی جاتی ہے جو کہ عورتوں کی مامتا کی طرح ہوتی ہے ۔ اس تبدیلی کے سبب باپ بھی اپنے بچے کے ساتھ ایک ایسے رشتے سے منسلک ہوتے ہیں جو آنے والے وقت میں بچے کی تربیت میں اہم کردار ادا کرتے ہیں ۔

خاص طور پر نۓ باپ بننے والے مرد کا دماغ ایک خاص طریقے سے کام کرتا ہے جس میں وہ اپنے بچے کے مستقبل کے لیۓ پلاننگ کرتا ہے اپنے بچے کی آئندہ زندگی کو پر سکون رکھنے کے لیۓ اور اس کو خطرات سے بچانے کے لیۓ بڑے فیصلے کرنے کی صلاحیت حاصل کرتا ہے تاکہ اس کا بچہ اس دنیا میں محفوظ اور خوش رہ سکے

مردوں میں بھی حمل کی کچھ علامات ظاہر ہوتی ہیں

باپ
Image Credit: East Coast Daily

یہ بات سننے میں عجیب سی لگتی ہے کہ مرد بھی باپ بننے کے دوران ان علامات کا سامنا کر سکتےہیں جن سے ان کا لائف پارٹنر گزر رہا ہوتا ہے ۔ ان کو بھی متلی ہو سکتی ہے ان کا دل بھی کچھ خاص چیزوں کو کھانے کے لیۓ مچل سکتا ہے یا پھر وہ بھی کمر میں درد کو محسوس کر سکتےہیں ۔ ماہرین اس کو سمپیتھی پریگننسی کا نام دیتے ہیں

اگرچہ اس کے حوالے سے وہ کوئی میڈیکل وجہ پیش کرنے سے قاصر ہیں مگر ان کا یہ ماننا ہے کہ اس کا سبب مرد کا اپنے لائف پارٹنر سے جزباتی طور پر جڑا ہونا ہو سکتا ہے

یاد رہے!! باپ بننے کا موقع ایک مرد کے لیۓ بھی اتنا ہی خاص ہوتا ہے جتنا کہ کسی عورت کے لیۓ ہو سکتا ہے ۔ اس وجہ سے یہ سوچنا کہ حمل کی مدت کے دوران ساری توجہ کا محور عورت اور اس کی صحت ہونی چاہیۓ غلط ہے ۔ اس وقت مرد کو بھی خصوصی توجہ اور محبت کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ اپنی زندگی کے اس اہم وقت کے لیۓ تیار ہو سکے

اس قسم کی کسی بھی علامات کو نظر انداز کرنا درست نہیں ہے اس وقت میں ہونے والی کسی بھی قسم کی تبدیلی کے لیۓ اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کیا جا سکتا ہے آن لائن مشورے کےلیۓ مرہم ڈاٹ پی کے کی ایپ داون لوڈ کریں یا پھر 03111222398 پر رابطہ کریں