مختلف ممالک میں وزن کم کرنے کے دلچسپ طریقے

Weight Loss & Obesity
lose weight
Reading Time: 3 minutes

دنیا کے مختلف ممالک میں جہاں رہن سہن اور معاشرتی اطوار میں تنوع پایا جاتا ہے وہیں مختلف بیماریوں سے نمٹنے کے طریقے بھی الگ الگ ہیں۔ موٹاپا بلاشبہ ان چند بیماریوں میں شمار ہوتا ہے جن سے تمام بنی نوع انسان بلا تفریق رنگ ونسل متاثر نظر آتی ہے۔ خطئہ ارض کے ہر حصے میں اس سے نجات پانے کے الگ الگ طریقے متعارف ہوئے ہیں جن کا جاننا یقیناً دلچسپی کا باعث ہے اور کیا خبر کس دیس کے طرزعمل آپ کو راس آ جائیں اور آپ بڑھتے تن و توش کی فکروں سے آزاد ہو کر صحت مند زندگی گزارنے لگیں۔

تھائی لینڈ ۔ کھانوں کو مسالے دار بنائیں

دنیا بھر میں تھائی لینڈ کے کھانے سب سے مسالے دار ہوتے ہیں۔ مسالے دار غذائیں کھانے سے وزن قابو میں رہتا ہے کیونکہ یہ کم کھائی جاتی ہیں اور آپ تیز رفتاری سے کھانا نہیں کھا پاتے۔ خاص طور پر اگر کالی مرچ کھانے پر چھڑکی جائے تو اس سے ہضم و جذب کا نظام بہتر ہو جاتا ہے۔ جب ہم بہت تیز زفتاری سے کھانا کھاتے ہیں تو اس سے پیشتر کے دماغ یہ پیغام دے کہ معدہ پوری طرح سے بھر چکا ہے ، ہم زیادہ کھا بیٹھتے ہیں۔

آپ بھی اپنی کھانوں کو چٹ پٹا بنائیے اور وزن گھٹائیے۔

برازیل ۔ پھلیاں اور چاول کھائیے

برازیل کے لوگ اپنے ہر کھانے میں مختلف پھلیاں اور چاول ضرور شامل کرتے ہیں۔ تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ پھلیاں اور چاول کھانے سے 14 فیصد وزن کم ہو جاتا ہے، اس لیے کہ ان میں چکنائی بہت کم اور ریشہ بہت زیادہ ہوتا ہے۔ پھلیاں اور چاول کھانے سے خون میں شکر کی سطح بھی معمول پر رہتی ہے۔

انڈونیشیا ۔ کبھی کبھی فاقہ بھی کیجیے

انڈونیشیا کے باشندے اپنی صحت برقرار رکھنے کے لیے کبھی کبھی فاقہ بھی کرتے ہیں۔ وہ جب صبح سے شام تک کچھ کھاتے پیتے نہیں ہیں تو ان کا وزن کم ہو جاتا ہے۔ اس کے علاوہ وہ صرف چاول کھاتے ہیں یا صرف پانی پیتے ہیں۔ بیشتر ماہرین وزن کم کرنے کے لیے دن بھر کے فاقے کے حق میں نہیں ہیں۔ وہ کہتے ہیں کہ کھانا اس وقت کھایا جائے جب پہلے کھایا ہوا کھانا ہضم ہو چکا ہو۔کوشش کیجیے کہ دن بھر کے کھانے میں کیلوریز کم سے کم ہوں۔

پولینڈ ۔ باہر کی نسبت گھر میں کھانا کھائیے

پولینڈ کے افراد زیادہ تر گھروں میں کھانا کھاتے ہیں اور اپنی آمدنی کا صرف 5 فیصد باہر خرچ کرتے ہیں۔وہ افراد جو گھر سے باہر کھانے کے زیادہ عادی ہوتے ہیں وہ صحت کے معاملے میں اکثر پریشان رہتے ہیں،اسلیے کہ بازاری کھانے صحت بخش نہیں ہوتے۔ ہوٹلوں کے کھانے زیادہ کھانے سے وزن بڑھ جاتا ہے۔

جرمنی ۔ ناشتہ ضرور کیجیے

پچھترفیصد جرمن ناشتا ضرور کرتے ہیں۔جرمن پھل اور بے چھنے آٹے کی روٹی زیادہ کھاتے ہیں جس سے ان کا وزن نہیں برھتا ۔ایک برطانوی تحقیق کار کے مطابق جو لوگ ناشتا نہیں کرتے وہ کسی اور وقت میں زیادہ حراروں والی غذا کھا کر اپنا وزن بڑھا لیتے ہیں۔

ملائیشیا ۔ ہلدی کھانوں میں ضرور ڈالیے

ہلدی ملائیشیا کے جنگلات کا خود رو پودا ہے۔وہاں کے لوگ اسے اپنی غذائوں میں ضرور ڈالتے ہیں۔ہلدی میں پایا جانے والا ایک خاص عنصر کرکیومن چکنائی کو کم کرتا ہے۔چنانچہ ہمیں ہلدی کو اپنی غذائوں میں ضرور ڈالنا چاہیے تاکہ ہمارا وزن قابو میں رہے۔

ہنگری ۔ اچار اور سرکہ کھائیے

ہنگری کے رہنے والے اچار اور سرکے کے شوقین ہیں۔اگر آپ ان چیزوں کو اپنی غذا میں شامل کر لیں تو آپ کا وزن نہیں بڑھے گا۔ ایسا سرکے کی وجہ سے ہوتا ہےجس میں موجود ایسٹک ایسڈ کی وجہ سے بلڈپریشر، خون میں شکر کی سطح اور چکنائی کم ہو جاتی ہے۔ چنانچہ سرکے کو اپنی غذا میں ضرور شامل کیجیے۔

میکسیکو ۔ دوپہر کو زیادہ رات کو کم کھانے کا اصول اپنائیے

میکسیکو کے رہنے والے رات کے نسبت دوپہر کو ثقیل غذائیں کھا تے ہیں۔ رات کا کھانا کھانے سے نیند بہت اچھی آتی ہے۔بھرپور نیند لینا وزن میں کمی کا باعث بنتا ہے۔ لہذا صبح اور رات کے وقت کھائے جانے والے کھانوں میں حراروں کا اضافہ کر سکتے ہیں لیکن رات کا کھانا سادہ اور مختصر رکھنا فائدہ مند ہے۔

 

Share This:

The following two tabs change content below.
Sehrish
She is pharmacist by profession and has worked with several health care setups.She began her career as health and lifestyle writer.She is adept in writing and editing informative articles for both consumer and scientific audiences,as well as patient education materials.

Comments are closed.