(save your brain in old age)بڑھتی عمر کے اثرات سے دماغ کو بچائیے۔ یہ 3 عادات اپنائیے

Healthy Lifestyle
save your brain in old age
Reading Time: 3 minutes

الزائمر ڈیزیز اور عمر کے ساتھ دماغی صلاحیتوں میں کمی آجانا بہت سے لوگوں کے لیے سنگین تشویش کا باعث ہے لیکن تحقیق کے مطابق ایسے بیت سے اقدامات ہیں جن سے آپ دماغ پر پڑنے والے بڑھتی عمر کے اثرات کو زائل کر سکتے ہیں۔ کیا ہمارا دماغ استعمال کرنے سے بڑھتا ہے؟ کیا ذہنی آزمائش کے کھیلوں سے اور پیچیدہ سوال حل کرنے سے ہماری دماغی صلاحیتوں میں اضافہ ہوتا ہے؟

ایک تحقیق کے مطابق 2050 تک دنیا میں پینسٹھ سال سے زائد عمر کے افراد کی تعداد 1.1 ملین ہو جائے گی۔ جن میں سے 37 ملین افراد ڈیمینشیا یا بھولنے کے مرض کا شکار ہوں گے۔ یہ اعداد و شمار ایک خوفناک مستقبل کی طرف اشارہ ہیں۔

تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ دماغی آزمائش کے کھیل کھیلنا ذہن پر پڑنے والے عمر کے اثرات کو روک سکتا ہے۔ ذیل میں دی گئی حکمت عملی عمر میں اضافے پر آپ کے دماغ کی حفاظت میں معاون ثابت ہو سکتی ہے۔

ورزش کیجیے

باقاعدگی سے جسمانی ورزش کرنا آپ کے جسم کے ساتھ ساتھ آپ کے دماغ کو بھی صحت مند رکھتا ہے۔ تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ وہ لوگ جو جوانی اور ادھیڑ عمر میں جسمانی طور ہر فٹ رہتے ہیں وہ بڑھاپے میں ذہنی کمزوریوں اور بھولنے کے مرض سے بچے رہتے ہیں۔ دراصل عمر میں اضافے کے ساتھ دماغ سکڑنے لگتا ہے اور ایک مطالعے کے نتائج یہ کہتے ہیں کہ وہ لوگ جو پچیس سال کی عمر میں اچھی جسمانی ساخت رکھتے تھے ان لوگوں کے مقابلے میں دماغ کے سکڑنے کا کم سامنا کرتے ہیں جن کی جسمانی ساخت پچیس سال کی عمر میں اچھی نہیں تھی۔

محققین نے وضاحت کی کہ “ہماری تحقیقات نئے ثبوت فراہم کرتی ہیں کہ کم از کم دو دہائیوں کے بعد جسمانی ساخت اور فٹنس چھوٹے دماغ کے حجموں اور خراب ذہنی کارکردگی کے ساتھ منسلک ہیں. درمیانی عمر میں جسمانی فٹنس کا فروغ آبادی میں صحت مند دماغ کی عمر بڑھانے کے لئے ایک اہم قدم ہو سکتا ہے۔ لہذا اگر آپ اپنی ذہنی طاقت کو فروغ دینے اور اپنے دماغ کے طویل مدتی صحت کی حفاظت کرنا چاہتے ہیں تو باقاعدگی سے ورزش کا معمول شروع کریں. جسمانی طور پر فٹ ہونے کا تعلق صرف آپ کے جسم کو مضبوط رکھنے سے نہیں ہے – یہ آج اور آنے والے کئی سالوں میں آپ کے دماغ کے صحت مند کا ضامن ہے۔

Read Also: 3 memory tricks to help you remember everything

پڑھیے اور لکھیے

شکاگو میں رش یونیورسٹی میڈیکل سینٹر اور ایبولینو انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کے محققین نے یہ تجزیہ کیا ہے کہ دماغی سرگرمیوں جیسے ویڈیو گیمز، اور تحریری کھیل کھیلنے سے دماغ صحت مند رکھنے میں مدد مل سکتی ہے. ابتدائی تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ ذہنی طور پر فعال اور دماغی صلاحیتیں استعمال کرنے سے متعلق سرگرمیوں میں ملوث رہنے سے ذہنی تیز رفتاری کو برقرار رکھنے میں مدد ملتی ہے، لیکن ایک جدید ترین تحقیق یہ بھی بتاتی ہے کہ ایسی چیزوں سے دماغ کی ساختی سالمیت کو بچانے میں بھی مدد مل سکتی ہے۔.

مطالعہ کے لیڈر مصنف ڈاکٹر کنسٹنٹین آرفافاکس نے وضاحت کی، “اخبار کو پڑھنا، لکھنا، ایک لائبریری کا دورہ، کسی کھیل یا کھیل کھیلنے میں مدد، جیسے شطرنج دماغی صحت برقرار رکھنے میں مددگار ہوتے ہیں۔

دماغ کو تحریک دینے والے کھیلوں سے لطف اندوز ہوں

دماغ ایسی تخلیق ہے جس کی بقا کا راز اس کے استعمال ہوتے رہنے میں ہے۔ جس قدر آپ اپنی دماغی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے زندگی گزاریں گے آپ اتنا ہی اس کو بڑھتی عمر کے اثرات سے بچانے میں کامیاب رہیں گے۔ نئی چیزیں سیکھنا اور مشکل پزل حل کرنا دماغی صلاحیتوں میں اضافے کا باعث ہے۔ ایک تحقیق کے نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ وہ لوگ جو عمر میں اضافے کے باوجود نئی چیزیں سیکھتے رہتے ہیں، مصوری اور موسیقی کی مشقوں میں حصہ لیتے ہیں اور دماغی طور پر فعال رہتے ہیں ان لوگوں کی نسبت بڑھاپے میں بھولنے کے مرض کا کم شکار ہوتے ہیں جو دماغی صلاحیتوں کا استعمال نہیں کرتے۔

Share This:

The following two tabs change content below.
Sehrish
She is pharmacist by profession and has worked with several health care setups.She began her career as health and lifestyle writer.She is adept in writing and editing informative articles for both consumer and scientific audiences,as well as patient education materials.

1 Comment to (save your brain in old age)بڑھتی عمر کے اثرات سے دماغ کو بچائیے۔ یہ 3 عادات اپنائیے