ماہواری میں آپ کوکونسے مسائل کاسامناہوتاہے؟

Reading Time: 2 minutes

خواتین کے بہت سےایسے پوشیدہ مسائل ہیں جن کووہ زیرِبحث لانا شرمندگی کاباعث مجھتی ہیں۔لیکن وہ ہی مسائل ان کےپریشانی کاباعث بنتے ہیں۔جب لڑکی بلوغت میں پہچتی ہےتوماہواری یعنی حیض کےدن شروع ہوتےہیں۔ ۔ہمیں ماہواری میں بہت سے مسائل کا سامناکرناپڑتاہے،کچھ لڑکیوں کوحیض کے دوران تکلیف کابھی سامناہوتاہے۔ماہواری کے دوران جومسائل ہوتے ہیں وہ جاننے کے لئے یہ مضمون پڑ ھیں۔

قبل ازحیض-

قبل ازحیض خواتین کوجو مشکلات ہوتیں ہیں وہ مندرجہ ذیل ہیں؛
چڑاچڑاپن-
کمردرد-
سردرد-
کیل مہاسے-
ضرورت سے زیادہ تھکاوٹ-
تناؤ-
ذہنی دباؤ-
نیند نہ آنا-
قبض-
چھاتی میں تکلیف-
معدےمیں ہلکی درد-
آپ ہرماہ مختلیف علامات کاسامناکرسکتے ہیں اوران کی شدت بھی محتلیف ہوسکتی ہے۔لیکن یہ عام طورپرتشویشناک حالت نہیں ہے۔

زیادہ حیض کا ہونا-

زیادہ حیض کاہوناایک اور مسئلہ ہے، اس کا مطلب ہے کہ معمول سےزیادہ خون کا بہاؤ ہوتا ہے۔حیض5یا7دن سےزیادہ نہیں رہ سکتے ہیں۔

کئی ایسی وجوہات ہیں جن کی وجہ ماہواری زیادہ دن تک رہ سکتی ہے؛
بلوغت-
اندامِ نہانی کا انفیکشن-
فائبرائیڈ-
اندامِ نہانی کے نچلے حصے میں سوزش-
غذا یا ورزش میں تبدیلی-

حیض کاکم ہونا-

کچھ خواتین میں حیض کم ہونےکی شکایت کم ہوسکتی ہے۔یہ مسئلہ بلوغت میں تاخیرکی وجہ سے یا عورت کےتولیدی نظام میں پیدائشی خرابی کی وجہ سے بھی ہوسکتا ہے۔ْ
ماہواری کا کم ہونا ان وجوہات کی وجہ سے ہوتا ہے؛
حمل کی وجہ سے-
اچانک وزن میں کمی یازیادہ ہونا-
پیدائش پر کنٹرول کرنا-
تولیدی انفیکشن-
اگرآپ کو ماہواری نہیں آتی تواس کا مطلب ہے کہ یا توکوئی آپ کو صحت کا مسئلہ ہےیاآپ حاملہ ہیں، اس کے لئے آپ کو اپنی ڈاکٹر کو دکھانے کی ضرورت ہے۔

تکلیف دہ حیض-

حیض کا زیادہ یا کم ہونےکے علاوہ حیض تکلیف کا بھی باعث بن سکتے ہیں۔کچھ خواتین کو حیض میں درد کا سامنا کرنا پڑتا ہے ان کی وجوہات مندرجہ ذیل ہیں؛
فائبرائیڈ-
سوزش-
اندامِ نہانی کے باہر غیر معمولی ٹشو کی نشوونما-
اگرخدانحواستہ آپ بھی ان مسائل کا سامنا کر رہے ہیں تو آپ کو جلدازجلد ڈاکٹر سے راہنمائی کی ضرورت ہےاس کے لئےآپ گھر بیٹھے ایک فون کال کی مدد سے مرہم۔پی۔کے کی ویب سائٹ سے ماہرامراض نسواں کی اپائنمنٹ حاصل کرسکتے ہیں اس کے علاوہ آپ وڈیو کا یا اس نمبر پر 03111222398 آن لائن کنسلٹیشن لے سکتے ہیں۔

The following two tabs change content below.

Leave a Comment