میٹھی عید پر زیادہ میٹھی چـیزوں کا کھانا صحت کے 8 بڑے مسائل کا سبب

Reading Time: 4 minutes

میٹھی عید یا عید الفطر کا موقع ایسا موقع ہوتا ہے جو کہ رمضان کے روزوں کے بعد انعامات کی صورت میں اللہ کی جانب سے عید کا انعام ملتا ہے ۔ جیسا کہ اس کے نام سے بھی ظاہر ہے کہ یہ عید میٹھے کھانوں کے حوالے سے مخصوص ہوتی ہے

اس میٹھی عید پر ایک ماہ کے روزوں کے بعد طرح طرح کے میٹھے پکوان ، مٹھائياں کھائی جاتی ہیں ۔ اور اکثر لوگ رمضان میں کی جانے والی ساری احتیاطوں کو یکسر فراموش کر کے بے تحاشا کھانا پینا شروع کر دیتے ہیں اور یہ بھول جاتے ہیں کہ زیادہ مٹھاس کا استعمال ان کو صحت کے بہت سارے مسائل میں بھی مبتلا کر سکتا ہے

میٹھی عید پر زیادہ میٹھی اشیا کھانے کے صحت پر اثرات

میٹھی عید
Image Credit:The Cook Book

زیادہ میٹھا کھانے سے جہاں ایک جانب فوری توانائی حاصل ہوتی ہے اور میٹھا کھانے سے منہ کا مزہ بھی بہت بہتر ہو جاتا ہے ۔ میٹھا ایک حد تک کھانا اور کھانے کے بعد تھوڑا میٹھا کھانے سے ہاضمہ بہتر ہوتا ہے مگر بار بار یہ کھانے سے اس کے صحت پر کچھ منفی اثرات بھی مرتب ہوتے ہیں جن کے بارے میں ہم آپ کو آج بتائيں گۓ

وزن میں اضافہ

دنیا بھر میں تمام ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ زیادہ میٹھا کھانے سے وزن میں بے تحاشا اضافہ ہوتا ہے ۔ خاص طور پر مصنوعی مٹھاس والے مشروبات کے استعمال سے موٹاپے میں اضافہ دنیا بھر میں سب سے زیادہ دیکھنے میں آیا ہے ۔

میٹھی اشیا میں موجود فرکٹوز نامی گلوکوز درحقیقت بار بار بھوک کے لگنے کا سبب بنتا ہے۔ جس کی وجہ سے انسان زيادہ کھاتا ہے اور وزن بڑھا بیٹھتا ہے اس کے علاوہ میٹھے مشروبات کے استعمال سے پیٹ کی چربی میں بھی اضافہ ہوتا ہے

دل کی بیماری کے خطرات میں اضافہ

میٹھی عید
Image Credit: Cleveland Clinic

زیادہ مٹھاس والے کھانوں کے استعمال سے کئی بیماریوں میں مبتلا ہونے کے امکانات میں بھی اضافہ ہوجاتا ہے ۔ ایک جانب تو اس سے موٹاپے میں اضافہ ہوتا ہے اس کے ساتھ ساتھ خون کے اندر کولیسٹرول کی مقدار خون میں شوگر کے لیول کے بڑھنے سے بڑھ جاتا ہے

خون میں کولیسٹرول کے لیول کی اتنی مقدار کا بڑھ جانا دل کے دورے کےخطرات میں اضافہ کر دیتا ہے ۔ ماہرین نے اس حوالے سے 30،000افراد پر ریسرچ کی ان افراد میں جو کہ 17 فی صد سے 21 فی صد تک کیولوریز مٹھاس سے حاصل کرتے تھے۔

 ان کے اندر دل ک دورے کے خطرات میں 38 فی صد اضافہ ہو جاتا ہے جب کہ ایسے افراد جو 8 فی صد تک کیلوریز مٹھاس سے حاصل کرتے تھے ان کے اندر دل کے دورے کے خطرات کم ہوتے ہیں

ذیابطیس کے خطرات میں اضافہ

دنیا میں گزشتہ تیس سالوں میں ذیابطیس کے مریضوں کی تعداد میں دگنا اضافہ ہوا ہے ۔ اگرچہ اس شرح میں اضافے کی کئی دیگر وجوہات بھی ہیں ۔ مگر اس کے ساتھ زیادہ میٹھے کا استعمال اس کی سب سے بڑی وجہ ہے ۔

ذیابطیس کا سب سے بڑا سبب موٹاپا قرار دیا گیا ہے جو کہ میٹھی اشیا کے کھانے سے ہوتا ہے زیادہ مٹھاس کا استعمال انسولین کی حساسیت میں کمی کرتا ہے جس کی وجہ سے خون کے اندر شوگر کے لیول میں اضافہ ہوجاتا ہے

کینسر کا بھی باعث ہو سکتا ہے

میٹھی عید
Image Credit: Biology Dictionary

ایک تحقیقی کے مطابق 430،000 افراد کے اوپر کی گئي ایک ریسرچ کے مطابق زیادہ میٹھی اشیا کے کھانے سے جسم میں آنتوں کے کینسر کے خطرات بہت بڑھ جاتے ہیں ایک اور تحقیق کے مطابق جو خواتین دن مین بیکری کی اشیا اور میٹھی اشیا کا استعمال زیادہ کرتی ہیں ان کے اندر اینڈومیٹریل کینسر کا خطرہ بڑھ جاتا ہے

اسی وجہ سے میٹھی عید اور عام حالات میں زیادہ میٹھا کھانے والی خواتین کو اس حوالے سے احتیاط کرنی چاہیے

عمر کے اثرات

چہرے پر جھریوں کا پڑنا عمر کے بڑھتے ہوۓ اثرات کی ایک بڑی نشانی ہوتی ہے ۔ اچھی اور متوازن غذا کے استعمال سے عمر کے ان اثرات کو سست ضرور کیا جا سکتا ہے۔ لیکن جب انسان زیادہ میٹھی اشیا کا استعمال کرتا ہے تو اس سے ایک مادہ جسم میں بنتا ہے جس کا نام ایڈوانس گلائکیشن اینڈ پروڈکٹ ہے جو کہ جسم میں پہلے سے موجود پروٹین کے ساتھ مل کر جھریوں کے بننےکے عمل اور عمر کے اثرات کو بڑھانے کے عمل کو تیز کر دیتی ہے

یہی وجہ ہے کہ عام طور پر ذیابطیس کا مریض وقت سے پہلے بڑھاپے کا شکار ہوجاتا ہے ۔ اسی طرح زیادہ میٹھا کھانے والے افراد بھی ان ہی مسائل کا سامنا کرتےہیں

جگر کی سوزش کا سبب

میٹھی عید
Image Credit: Harvard Health

فرکٹوز کی زیادہ مقدار میں غذا میں شمولیت جگر پر چکنائی کی تہہ کے جمع ہونے کا سبب بن سکتی ہے ۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ جسم میں فرکٹوز کو ہضم کرنے کی ذمہ داری صرف اور صرف جگر پر ہوتی ہے جو کہ فرکٹوز کو توانائی میں تبدیل کرتا ہے یا پھر اس کو چکنائی کی صورت میں جمع کرتا ہے ۔

اسی وجہ سے میٹھی عید پر زیادہ مٹھاس کا استعمال جگر پر چکنائی کے جمع ہونے کا سبب بن کر جگر کی سوزش کا باعث ہوتا ہے اس صورت میں علامات سامنے آنے پر جگر کے ڈاکٹر سے رابطہ ضروری ہے

میٹھی عید کے موقع پر صحت کے حوالے سے کسی بھی قسم کے مشورے کے لیۓ اب ڈاکٹر کے کلینک کے چکر لگانے کی ضرورت نہیں بلکہ گھر بیٹھے مرہم ڈاٹ پی کے کی ایپ ڈوان لوڈ کریں یا پھر براہ راست 03111222398 پر رابطہ کریں۔

The following two tabs change content below.
Ambreen Sethi

Ambreen Sethi

Ambreen Sethi is a passionate writer with around four years of experience as a medical researcher. She is a mother of three and loves to read books in her spare time.