ہونٹوں کی خوبصورتی برقراررکھیں۔

Reading Time: 3 minutes

ہمارےچہرےکی خوبصورتی میں جتنااہم کردار ہماری آنکھیں اوربال کرتے ہیں اتنے ہی اہم ہمارے ہونٹ ہیں،اگرہمارےہونٹ خشک اور پٹھےہوئےہونگےنہ توہم اچھی سیلفی لےسکتے ہیں اورنہ ہی ہمارے ہونٹوں پرلپسٹلک خوبصورتی میں اضافہ کرسکتی ہے۔موسم سرماکےآغازکےساتھ ہمارے ہونٹ خشک ہوناشروع ہوجاتے ہیں۔ہمارےہونٹوں کی جلد نرم حساس اور پتلی ہوتی ہے یہ ہمارے چہرےپرایک ایساعضوہےجوہمارے چہرے کی خوبصورتی میں اضافہ کرتاہے۔ہمارے ہونٹوں میں چکنائی والے گلینڈزنہ ہونے کی وجہ سے ہمارے ہونٹ خشک ہوتے ہیں کچھ لوگ ہونٹوں پر نمی برقرار رکھنے کے لئےاپنی زبان کو اکثر اپنے ہونٹوں پھیرتے ہیں،اور دانتوں سےاپنے ہونٹوں کو چباتے ہیں۔جوکہ ایک نقصان دہ عمل ہےاس سے نہ صرف ہمارےہونٹ کالے ہوتے ہیں بلکہ ان سے بعض اوقات خون بہنا بھی شروع ہوجاتا ہے۔اکثر شعروشاعری میں ہونٹوں کو گلاب کی پنکھڑیوں سے بھی تشبیہ دی جاتی ہے۔

خوبصورت گلابی اور نرم وملائم ہونٹ ہرایک کی خواہش ہوتی ہےہرانسان چاہتا ہے کہ وہ چہرے کی خوبصورتی اور دلکشی برقرار رکھنے کے لئےاپنے ہونٹوں کی نمی بخال رکھے۔سردیوں کی یخ بختہ ہوائیں جہاں ہمارے بالوں اور چہرے کو متاثر کرتیں ہیں وہاں ہمارے ہونٹ بھی محفوظ نہیں رہ سکتے۔سردیوں کے موسم میں ہمیں اپنے بالوں ،چہرے کی خوبصورتی کےساتھ ساتھ ہونٹوں پربھی توجہ کی ضرورت ہے کیونکہ کہ یہ ہمارے چہرے پر واضح نظرآنےوالا عضوہے۔ہم کیسے سردیوں کے موسم میں اپنے ہونٹوں کی خوبصورتی قائم رکھ سکتے ہیں اس کے کچھ آسان طریقےیہ ہیں ہونٹوں کی خوبصورتی بخال رکھنے کے چند طریقے مندرجہ ذیل ہیں۔

بادام اورشہد

بادام کا تیل غذائیت سے بھرپور ہوتا ہے،بادام کے تیل میں موجود وٹامن ای ہمارے ہونٹوں کے لئے بہت اہم ہے۔بادام میں پروٹین،میگنیشم اور فائبربھرپورمقدار میں پایاجاتاہے۔اس میں موجود وٹامن ای وٹامن سی کے ساتھ مل کر بہترین موئسچررائز بناتا ہے۔شہد میں وٹامن سی موجود ہوتا ہے اس میں موجودزنک،آئرن،میگنیشیم اور فاسفورس بہت اہم ہیں۔بادام کے تیل کو سونے سے قبل شہد میں ملاکر لگائیں اور اگلی صبح گرم پانی سے دھولیں۔سردیوں میں اس کام کو معمول بنا لیں آپ کے ہونٹوں کی خوبصورتی برقرار رہے گی۔

ہونٹوں کو ہائیڈریٹ رکھیں

انسانی جسم کے لئےپانی بہت ضروری ہے،ایک انسانی جسم میں پچاس سے ساٹھ فیصدپانی ہوتا ہے۔سردیوں میں پانی کی کمی کی وجہ سے ہونٹوں پرخشکی ہوتی ہے۔پانی کی کمی کی وجہ سے انسان ڈی ہائیڈریشن کا شکارہوجاتا ہے۔ایساہونے سے جسم جلد سے پانی کھنچتا ہےاوراسے خشک کردیتا ہے۔عام طور پر جلد خشک ہونے پر ہونٹ ہی زیادہ متاثر ہوتے ہیں اس لئے دن میں کم از کم آٹھ گلاس پانی لازمی پینا چاہیے۔

چقندرکااستعمال

چقندرمیں تھامین،وٹامن بی6،وٹامن سی اور فولیٹ پایاجاتاہے،جوانسانی صحت کے لئے بہت ضروری ہیں۔چقند کا استعمال اگر ہونٹوں پر کیاجائےتو خشکی کے ساتھ ساتھ ہونٹوں کی سیاہی بھی دور ہوتی ہے۔چقندرکا تھوڑا سا جوس نکال کراس میں اس میں شہد ملا کر رات کو اپنے ہونٹوں پر لگا لیں،یہ آپ کے ہونٹوں کا موئسچررائز کرے گااورہونٹوں کو نرم بنائے گا۔

وٹامنزکااستعمال

وٹامنز کی کمی جیسےوٹامن بی،آئرن اور فیٹی ایسڈ کی کمی کی وجہ سے بھی ہونٹ خشکی کا شکارہوتے ہیں،اس لئےایسی غذاؤں کا استعمال کرنا چاہیے جو ضروری غذائی اجزااور وٹامنزسے بھرپور ہوں۔سردیوں کے موسم میں مچھلی فیٹی ایسڈ کا بہت اچھا ذریعہ ہے۔سردیوں کے موسم میں پھلوں او ر سبزیوں کا استعمال لازمی کرنا چاہیے۔تاکہ ہمارےجسم کی نمی برقرار رہ سکے اور ہمیں وہ تمام غذائی اجزامل سکیں جن کی ہمیں ضرورت ہو۔

گلیسرین کا استعمال

سردیوں کے موسم میں گلیسرین یا لپ بام کا استعمال لازمی کرنا چاہیے،،بالائی میں دو قطرے گلیسرین کے ملا روازانہ رات کو ہونٹوں پر لگانے سے ہمارے ہونٹوں کی نمی برقرار رہتی ہے۔

اختیاط

اپنے ہونٹوں کا چبانےسے پرہیز کریں ایسا کرنے سے آپ کے ہونٹ خشک ہوتے ہیں۔اور زخم بنتے ہیں۔

خوشبودارلپ بام سے پرہیز کریں۔

مصالحہ دار کھانوں کا استعمال نہ کریں۔اس سے ہونٹوں کی جلن اور خارش بھی ہوسکتی ہے۔

ہم بہت سے طریقے اپناکر اپنے ہونٹوں کی خشکی تو دور کرسکتے ہیں لیکن اگرآپ کسی انفیکشن یعنی الرجی یاخارش کا شکار ہیں تواس کے لئےآپ کو جلد کے ڈاکٹر سے مرہم۔پی۔کے کی ویب سائٹ سے گھر بیٹھے اپائنمنٹ لے سکتے ہیں اس کےعلاوہ وڈیوکال پرآن لائن کنسلٹیشن لےسکتے ہیں۔

The following two tabs change content below.

Leave a Comment