پسینے کی زیادتی کس بیماری کے باعث ہوتی ہے جانیں 

Reading Time: 3 minutes

 پسینے کی وجہ سے گرمی کے موسم میں اللہ تعالی نے ہمارے جسم میں ایسا قدرتی نظام نصب کیا ہوتا ہے ۔ جس کے تحت گرمی کا سامنا کرنے پر ہمارے جلد میں موجود گلینڈ پسینے کو خارج کرتے ہیں۔ جس سے جسم کو ٹھنڈک اور تازگی ملتی ہے ۔ پسینے کا آنا  صحت کے لۓ بہتر ہوتا ہے ۔

مگر ہرچیز کا توازن میں ہونا انسان کے لیۓ بہتر ہوتا ہے۔ لیکن جب یہ توازن کسی بھی حوالے سے بگڑتا ہے ۔تو اس کے مضر اثرات بھی ہوتے ہیں ۔ عام طور پر گرمی کے موسم میں یا کسی ایکسرسائز وغیرہ کو کرنے کے بعد یا جزباتی طور پر خوفزدہ ہونے کے سبب پسینہ اکثر افراد کو آتا ہے ۔ مگر کچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جن کو ہر وقت پسینہ آتا رہتا ہے ۔

ایسے لوگ درحقیقت ایک بیماری ہائپر ہائڈروسس میں مبتلا ہوتے ہیں  ۔اس بیماری کے سبب بغیر کسی وجہ کے انسان کو بیٹھے بٹھاۓ پسینہ آتا رہتا ہے ۔ اس بیماری میں مبتلا افراد کے ہاتھوں کی ہتھیلیاں پسینے سے بھیگی رہتی ہیں اس بیماری میں مبتلا بچوں کی اسکول کی کاپیوں کے صفحات اکثر گیلے ہونے کے سبب پھٹ جاتے ہیں

( Hyperhidrosis ) زیادہ پسینےکے  آنےکے اسباب

اس بیماری سے متاثرہ مریض کو صرف گرمی میں ہی پسینہ نہیں آتا۔ بلکہ سخت سردی میں بھی ان کو پسینہ آتا ہے ۔ یہ بیماری وراثتی بھی ہو سکتی ہے اور اس کا سبب خواتین میں مینو پاز ، یا تھائی رائڈ گلینڈ کی خرابی بھی ہو سکتے ہیں ۔ اس کے علاوہ دل کی بیماری ، کینسر کے مریض پھپھڑوں کی بیماری میں مبتلا افراد ، اور ایڈز کے مریضوں میں بھی اس بیماری کی علامات ہو سکتی ہیں۔

 ہائپر ہیڈروسس میں مبتلا ہونے کی علامات

پسینے
Image Credits: The Logical India

اس بیماری کے مریضوں کو عام طور پر ہاتھوں کی ہتھیلیوں میں ، پیروں کے نیچے والی جگہ پر ، بغلوں میں چہرے پر اور سر پر اتنا شدید پسینہ آتا ہے۔ کہ انسان بالکل گیلا ہو جاتا ہے ۔ اس بیماری کا آغاز بچپن ہی سے ہو جاتا ہے ۔اور اس کی علامات ظاہر ہونا شروع ہو جاتی ہیں ۔ ایسے مریض موروثی طور پر اس مرض میں مبتلا ہو سکتے ہیں۔

اس حوالے سے مذید معلومات کے لیۓ یہاں کلک کریں

زیادہ پسینہ آنے کی بیماری کا علاج

اس بیماری کے علاج کے  لیۓ جنرل فزیشن سے رجوع کرنا چاہیۓ۔ جو علامات کی بیناد پر اس بیماری کاعلاج کر سکتے ہیں

پسینہ روکنے والے لوشن یا اسپرے

زیادہ پسینہ آنے کی صورت میں ڈاکٹر ایسے اسپرے یا لوشن تجویز کر تے ہیں۔ جن کو پسینے والی جگہ پر لگانے سے عارضی طور پر اس جگہ پر پسینے کے آنے کو روکا جا سکتا ہے۔ لیکن یہ ایک عارضی علاج ہے

زیادہ پسینے والی جگہ پر ہلکا کرنٹ لگانے سے

اس طریقہ علاج کو آئی اونٹوفوریسز کہتے ہیں ۔ اس میں ان جگہوں کو جہاں زیادہ پسینہ آتا ہے پانی میں گیلا کر کے ہلکی طاقت کا کرنٹ لگایا جاتا ہے جس سے پسینہ لانے والے غدود عارضی طور پر کام کرنا چھوڑ دیتے ہیں۔ اور اس سے کچھ عرصے کے لیۓ اس تکلیف سے جان چھٹ جاتی ہے

بوٹوکس  انجکشن لگانے سے

پسینے
Image Credit: Affilated Dermatology

جلد پر ان انجکشن کو لگانے سے جلد کے نیچے موجود پسینہ پیدا کرنےوالے غدود کو غیر متحرک کیا جا سکتا ہے ۔کیوں کہ یہ ان نسوں کا راستہ بند کر دیتے ہیں۔ جو کہ پسینہ پیدا کرنے والے غدود تک پیغام لے کر جاتی ہیں

پسینہ کم کرنے کے گھریلو علاج

اس تکلیف سے علاج کے لیۓ عام گھریلو ٹوٹکوں سے بھی علاج کیا جاتا ہے۔ جو کہ کچھ اس طرح سے ہیں

پسینہ روکنے والے اسپرے کا بار بار استعمال کیا جاے۔

روزانہ نہایا جاۓ۔ تاکہ پسینے کی نمی کی وجہ سے جلد پر بیکٹیریا نہ پیدا ہو سکیں

اگر آپ کے پیروں میں پسینہ آتا ہے تو ایسے جوتوں کا استعمال کریں۔ جو خالص چمڑے کے بنے ہوں۔ پلاسٹک  یا دیگر مصنوعی اجزا کے بنے جوتے ایک جانب تو زیادہ پسینے کا باعث ہوتے ہیں۔ اور دوسری جانب ایک ناگوار بو کا بھی سبب ہوتے ہیں

زیر جامہ اور موزے روزانہ کی بنیاد پر تبدیل کرنے چاہیۓ ہیں

اس کے علاوہ ہاتھوں اور پیروں کو پھٹکری والے پانی سے دھونے سے بھی پسینے میں کمی واقع ہوتی ہے۔

یاد رکھیں کہ یہ بیماری اگر ابتدائی مرحلے پر ہی شناخت ہو جاۓ۔ تو اس کا کسی حد تک علاج ممکن ہے۔ ورنہ اس کے علاج سے پسینہ کے آنے میں کمی تو کی جا سکتی ہے۔ مگر اس سے مکمل طور پر چھٹکارہ نہیں پایا جا سکتا ہے

اس حوالے سے تفصیلا ڈاکٹر سے آن لائن مشورے کے لیۓ مرہم ڈاٹ پی کے کی ایپ ڈاون لوڈ کریں۔ یا پھر 03111222398 پر براہ راست رابطہ کریں

The following two tabs change content below.
Ambreen Sethi

Ambreen Sethi

Ambreen Sethi is a passionate writer with around four years of experience as a medical researcher. She is a mother of three and loves to read books in her spare time.